Wed 24 Apr 2013

 

Wake up Pakistan... 

عجب رسم ھے چارہ گروں کی محفل میں,,

لگا کر زخم, نمک سے مساج کرتے ہیں...

غریبِ شھر ترستا ہے ایک نوالے کو,,

امیرِ شھر کے کتے بھی راج کرتے ہیں...

...............

 

ستم زریفیِ وقت نے کلیوں کی نزاکت کو،،

دلوں کی محبت کو،،

اس طرح سے مسلا ہے،،

اس طرح سے کُچلا ہے،،

کہ زندگی ازیت ہے،،

اور سانس کی بھی قیمت ہے،،

کس کا ہاتھ ہے، جو خون سے رنگا نہیں،،

کس کا گریبان ہے جو گرفت سے بچا نہیں،،

صداِ موت آتی ہے شھر بھر کی گلیوں سے،،

خون کی بو آتی ہے پھولوں کی کلیوں سے۔۔

  
Categories : Thoughts / Lessons
E-mail this post to someone or Comments here

Add Comment Post comment

 
 
 
   Country flag

Loading

For mobile, tablets or touch devices, if verify button is disabed, please press Enter after entering captcha verfication text than click Verify button.